’’ ڈی جی آئی ایس آئی نے بھاری بھرکم فائلیں ایرانی قیادت کو دکھاتے ہوئے کہا کہ ۔۔۔۔‘‘ عمران خان کے دورہ ایران کے وقت ’ لیفٹیننٹ جنرل عاصم منیر ‘ نے کیا کِیا؟ تہلکہ خیز انکشاف

لاہور( نیوز ڈیسک) سینئر صحافی صابر شاکر کا کہنا ہے کہ وزیر اعظم عمران خان ایران کے دورے پر تھے جو کہ نہایت ہی اہمیت کا حامل تھا، اس دورے میں ڈی جی آئی ایس آئی لیفٹیننٹ جنرل عاصم منیر بھی تھے ، انکے ساتھ جانے کا مقصد صرف اور صرف

یہ تھا کہ ایران کی سر زمین جو کہ پاکستان کے خلاف استعمال ہو رہی ہے ، دہشت گرد عناصر کے کیمپ ایران میں موجود ہیں اور وہی سے دہشت گرد پاکستان آتے ہیں اور حملہ کرنے کے بعد واپس چککے جاتے ہیں ۔ تفصیلات کے مطابق سوشل میڈیا پر اپنے ویڈیو پیغام میں صابر شاکر کا کہنا تھا کہ بلوچستان میں جو حالیہ واقعہ ہوا ہے جس میں نیوی اور ائیر فورس کے اہلکاروں کو بس سے نکال کر نشانہ بنایا گیا ، انکو نشانہ بنانے والے دہشت گرد بھی ایران گئے جس کے ثبوت ہماری انٹیلی جنس ایجنسیوں نے اکٹھی کیے وزیر اعظم عمران خان کے دورہ ایران سے قبل ایرانی سفیر کو دیئے ، اس کے بعد وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے ایرانی ہم منصوب سے ٹیلی فونک رابطہ کیا اور انہیں ساری صورتحال سے آگاہ کرتے ہوئے بتایا کہ وزیر اعظم عمران خان کے دورہ ایران کا اصل مقصد کیا ہے ، دورے سے قبل کہی ایرانی لیڈر شپ کو آگاہ کر دیا گیا تھا کہ پاکستانی ڈیلی گیشن کس بات پر فوکس کرے گا ، دورے کے دوران ڈی جی آئی ایس آئی ایک بھاری بھرکم فائل لے کر گئے تھے ، جنہوں نے ایرانی فورسز، انٹیلی جنس ایجنسز اور تمام اعلیٰ قیادت کے ساتھ ان شواہد کو شیئر کیا اور اس موقع پر عمران خان نے بھی ایرانی قیادت کو ساری سورتحال سے آگاہ کیا ، اور اپنی تشویش کے ھوالے سے ایرانی لیڈر شپ کو آگاہ کیا اور انکی گوش گزار کیا۔ صابر شاکر کا مزید کیا کہنا تھا؟ ویڈیو آپ بھی دیکھیں :

 

Source: HassanNisar.pk

This post has been Liked 0 time(s) & Disliked 0 time(s)